پاکستان کے تفریحی مقامات کی فہرست

وادی سوات

daraal-lake-swat-valley
Wikipedia

یہ وادی پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا میں واقع ہے۔ اس وادی کی خوبصورتی وہاں موجود روشن سبز کھیت، جنگلات ،دلکش دیہات اور نیلے رنگوں کے بل کھاتے دریا وں میں ہے۔

جب بھی آپ سوات جاہیں تو مندرجہ ذیل تین مقامات  لازمی دی جو اس وادی کی خوبصورتی کی عکاسی کرتے ہیں ۔

بوئون گاؤں

اس کو گرین ٹاپ بھی کہتے ہیں جو کالام شہر سے کچھ فاصلے پرایک پہاڑی پر واقع ہے۔ یہاں پر انتہائی وسیع اور خوبصورت دیہات ہیں  اور پہاڑی کی چوٹی سے آپ گاؤں کا مکمّل نظارہ کر سکتے ہیں۔

کنڈول اور اسپنڈور جھیل

یہ جھیلیں  کالام سے کچھ فاصلے پر واقع ہیں۔یہاں  تک رسائی حاصل کرنے کا واحد ذریعہ جیپ  یہ پھر پیدل صفر ہے اور یہ دونوں جھیلیں پاکستان کے خوبصورت ترین مقامات میں سےایک  ہیں ۔

اوشو جنگل

ushu-forest-pakistan
Wikipedia

یہ جنگل دریائے کالام کے کنارے پر واقع ہے جو بہت ہی وسیع رقبے پر پھیلا ہوا بہت گھنا جنگل  ہے ۔

وادی ہنزہ

hunza-pakistan
Image by Abdullah Shakoor from Pixabay

ہنزہ حقیقت میں  ایک وسیع و عریض ضلع ہے جو متعدد وادیوں اور دیہاتوں پر مشتمل ہے۔ وادی ہنزہ میں موجود خوبصورت مقامات میں پاسو کونز ,عطا آباد جھیل اور  Eagle Nest  سر فہرست ہیں۔

وادی یارخون

یہ وادی خیبر پختون خواہ  میں ضلع چترال کے پاس واقع ہے. اور اس میں موجود بلند پہاڑی سلسلے اس کی خوبصورتی کو دوبالا  کرتے ہیں۔ اور یہ پہاڑی سلسلے بالائی چترال کو گلگت بلتستان میں موجود وادی ِیاسین سے جوڑتے ہیں ۔

پھندر جھیل

Phander_lake_pakistan
Wikipedia

یہ جھیل وادی ہنزہ میں پھندری گاؤں کے قریب واقع ہے. یہ صاف پانی کے  رنگ کی جھیل ہلکے سبز درختوں کے درمیان خاموشی سے بہتی ہے جو اس کی خوبصورتی کی اصل وجہ ہے ۔اس جھیل میں ہرے بھرے درختوں کا سایا آسانی کے ساتھ دیکھا جا سکتا ہے۔

وادی بروغیل

یہ پاکستان کے شمال میں واقع ہے. اس وادی میں جانے کا پیدل یا گھوڑوں کی مدد سے سفر کیا جاتا ہے.اور یہاں غیر ملکی افراد کا داخلہ ممنوع ہے.

لاہور

لاہور پاکستان میں موجود مغلوں کا شہر تھا . لاہور میں موجود بادشاہی مسجد ، وزیر خان مسجد اور لاہور قلعہ پاکستان کی تاریخی یادوں میں سے ہیں

ہنگول نیشنل پارک

یہ کراچی سے چند گھنٹوں کی دوری پر واقع ہے اس پارک کا کل رقبہ 6،000 مربع کلومیٹر سے زائد ہے اس پارک میں موجود ناقابل یقین حد تک منفرد چٹانوں کی تشکیل ، وسیع وادیاں اور جانوروں کی محتلف قسمیں اسکی خوبصورتی کا مرکز ہیں.

وادیِ کالاش

کالاش وادی Bomborte, Rimbor, and Barrier پر مشتمل ہے۔ اس وادی میں رہنے والے لوگوں کی ثقافت اور زبان پاکستان سے محتلف ہے۔  اس وادی کا شمار پاکستان کی خوبصورت ترین وادیوں میں ہوتا ہے ۔

دیوسائی نیشنل پارک

دیوسائی کو اکثر دنیا کی چھت بھی کہا جاتا ہے۔4114 میٹر کی  اونچائی  پر واقع دنیا کا دوسرا بلند ترین مقام ہے ۔ یہاں پر موجود چمکتی نیلی جھیلی،  برف سے ڈھکی ہوئی چوٹیاں اور لہراتا ہوا سبزہ اسکی خوبصورتی کو اور نمایاں کر تے  ہیں۔

گورکھ پہاڑیاں

یہ پہاڑیاں  سندھ میں واقع ہیں  اور ان کی چوٹی سطح سمندر سے  1734میٹربلند ہے جو جنوبی پاکستان کے خوبصورت نظارے پیش کرتی ہے۔

شمشال وادی

یہ وادی ہنزہ کی تحصیل گوجل میں واقع ہے  ۔ حیرت انگیز طور پر ، یہ گاؤں شمسی توانائی پر انحصار کرتا ہے ,اور آس پاس موجود کھیتوں میں سرسوں کے زرد پھول اسکی خوبصورتی میں اضافہ کرتے ہیں۔

شاہ جہاں مسجد

یہ پاکستان کے صوبہ سندھ کے قصبے ٹھٹھہ میں واقع ہے۔ اور اس مسجد کی  تعمیر شاہ جہان نے 1647میں کروائی جسے جامعہ مسجد بھی کہا جاتا ہے ۔ نیلے پتھر اس  رنگین مسجد کے اندرونی  حصے کی زینت ہیں ۔

فیری میڈوز

Fairy_Meadows_at_night
Wikipedia

فیری میڈوز کا سفر  ایک خطرناک سڑک  سے شروع ہوتا ہے۔  جو گلگت میں واقع ہےاس سڑک کی لمبائی 5کلو میٹر  ہے ،جس پر  جیپ کی مدد سے سفر طے کیا جاتا ہے۔ اسے  پریوں  کا میدان بھی کہا جاتا ہے اور اس میدان سے دنیا کی 9 ویں بلند پہاڑی چوٹی نانگا پربت کا نظارہ  بھی کیا جا سکتا ہے جو بہت ہی دلکش منظر پیش کرتا ہے ۔

وادی چپرسن

یہ وادی پاکستان کے مشرقی حصے میں واقع ہے. اس وادی میں بھی غیر ملکی سیاحوں کا داخلہ ممنوع ہے.

خنجراب پاس

یہ سطع سمندر سے 15،397 فٹ بلندی پر ہے  یہ پاس پاکستان اور چین کو آپس میں جوڑتا ہے۔ اسی مقام پر دنیا کی سب سے اونچی ATM مشین بھی نصب ہے۔

راکاپوشی بیس کیمپ

راکاپوشی شمالی پاکستان میں 7778میٹر بلند پہاڑ ہے. راکاپوشی بیس کیمپ کا ٹریک ایک دن میں مکمّل کیا جا سکتا ہے۔ شدید سردی کی وجہ سے صرف مئی اور اکتوبر کے درمیان  کوہ پیمائی کرنا  ہی ممکن ہے۔

مارگلہ پہاڑیاں

اسلام آباد میں موجود مارگلہ کی پہاڑیاں 12،000 ہیکٹر میں پھیلی ہوئی ہیں ان میں زیادہ تر پیدل سفر کے لیےراستے  ( جنہیں  TRAILS کہا جاتا ہے)   شامل ہیں۔اور مارگلہ میں موجود پہاڑوں کی چوٹیاں  آپ کو پورے شہر کا نظارہ بھی کرواتی ہیں اور دلچسب منظر پیش کرتی ہیں ۔

روہتاس فورٹ

قلعہ  روہتاس پنجاب میں جہلم کے قریب واقع ہے۔   اسےسولہویں   صدی میں تعمیر کیا گیا ،  یہ قلعہ یونیسکو کے عالمی ثقافتی ورثہ کی حیثیت سے پہچانا جاتا ہے ۔ اس قعلے کا رقبہ بہت ہی وسیع ہے اور انتہائی دلکش ہے ۔

نیلٹر ویلی

یہ وادی گلگت بلتستان سے تقریباً  54کلو میٹر کے فاصلے پر ہے. اس وادی میں موجود خوبصورت جنگلات، صاف پانی کی جھیلیں اور موسم سرما میں اسکیئنگ کی  سہولت بہت ہی دلکش مناظر  فراہم کرتے ہیں ۔

صحرا کٹپانہ

یہ دنیا کا سب سے ٹھنڈا صحرا ہے جو گلگت بلتستان میں واقع ہے.سردیوں میں یہ مکمّل برف سے ڈھک جاتا ہے. اور یہ  سطع سمندر سے 2,226 میٹر  بلند ہے ۔ جو اپنی خوبصورتی اور دلکشی کی وجہ سے مشہور ہے ۔

مزید دیکھیں

ملتے جلتے مضامین

اوپر جائیں
Close
error: Alert: Content is protected !!