پاکستان کے شہروں کے نام اور ان کی تاریخ

اسلام آباد

اس شہر کو 1959 میں پاکستان کے مرکزی دارلحکومت کا درجہ ملا ، اس کا نام اسلامی مذہب کے نام پر اسلام آباد رکھا گیا۔

راولپنڈی

اوائل میں یہ شہر راول قوم کا مسکن تھا ۔پندرہویں صدی میں چودھری جھنڈے خان نے اس  شہر کی بنیاد رکھی۔

کراچی

قریب 220سال پہلے یہ جگہ ماہی گیروں کی بستی تھی۔ اس کا نام کلاچو نامی ایک شخص کے نام پر کلاچی رکھا گیا ۔اور وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس کا نام کراچی پڑگیا۔ کراچی کو شہر کا درجہ 1925میں دیا گیا ،جبکہ 1948 سے 1959 تک یہ پاکستان کا پہلا دارلحکومت بھی تھا۔

حیدرآباد

حیدرآباد کا پرانا نام نیرون کوٹ تھا۔ 1768 میں غلام کلہوڑا نے اس کی بنیاد رکھی ۔اور اس شہر کوحضرت علی کے نام پر  حیدرآباد کے نام سے منسوب کر دیا۔ اور 1935میں اسے ضلع کا درجہ  گیا۔

کوئٹہ

کوئٹہ کا پرانا نام کواٹا تھا ۔اور کواٹا کے معنی ہیں قلعے ۔اور پھر آہستہ آہستہ اس کا نام کواٹا سے کوئٹہ ہو گیا۔

سر گودھا

اس شہر کا نام دو الفاظ یعنی سر اور گودھا سے مل کر بنا ہے ۔سر ہندی زبان میں  تالاب کو کہتے ہیں۔ اور گودھا ایک فقیر کا نام ہے، جو ایک تالاب  کے کنارے بیٹھا کرتا تھا جو اس شہر کے قریب واقعے ہے۔ اور بعد میں اس کا نام سر گودھا رکھ دیا گیا، جبکہ یہ شہر 1903 میں با قاعدگی سے آباد ہوا۔

بہاولپور

بہاولپور پاکستان کے ساتھ الحاق ہونے والی  پہلی ریاست تھی۔ اس شہر کا نام وہاں کے نواب بہاول خان کے نام پر رکھا گیا، جبکہ ایک ریاست بننے سے پہلے یہاں بہت وقت تک عباسی خاندان کی حکومت تھی۔

فیصل آباد

اس شہر پرانا نام لائل پور تھا ،جو ایک انگریز سر جیمز لائل  کے نام پر رکھا گیا۔ جس نے اس شہر کو آباد کیا تھا۔ جس کو بعد میں سعودی بادشاہ شاہ فیصل نام سے منسوب کر دیا گیا۔

رحیم یار خان

عباسیوں کے جس خاندان نے بہاولپور پر حکومت کی، ان میں سے ایک شخص جس کا نام نواب رحیم یار خان عباسی تھا ۔اس نے اس شہر کو آباد کیا۔

پشاور

پشاور کا مطلب ہے  پیشہ ور شروع میں دیہاتوں کے لوگ یہاں کام کے سلسلے میں آیا کرتے تھے ،جس کی وجہ سے اس نام پشاور پڑھ گے۔

ملتان

اس شہر کا پرانا نام کیسا پور تھا تاریخ کی کتب میں ہے، کہ یہاں ایک مالی  قوم آ کر آباد ہوئی اور سنکرت  میں آباد ہونے کو استھان کہتے ہیں۔ یوں اس کا نام مالی استھان پڑھ گیا جو وقت بدلنے کے ساتھ ساتھ مالی تان ، مولتان اور پھر ملتان ہو گیا۔

 

 

مزید دیکھیں

ملتے جلتے مضامین

اوپر جائیں
Close
error: Alert: Content is protected !!