جنات کی حقیقت اردو میں

  • جنات آگ سے پیدا کی گئی محلوق  ہے۔
  • جنات کی کوئی ایک شکل نہیں ہوتی وہ کسی کا بھی روپ اپنا سکتے ہیں. زیادہ تر جنات کتے، سانپ یا کسی ایسے جانور کی شکل احتیار کرتے ہیں جس سے انسان  خوفزدہ ہوتا ہے. جب کہ حقیقت میں وہ ایسے نہیں ہوتے ۔
  • ہم جنات کو صرف اس وقت دیکھ سکتے ہیں جب وہ خود کسی انسان کے سامنے آنا چاہیں۔
  • جنات مردہ لوگوں کی شکل بھی احتیار کر سکتے ہیں. جبکے بھوت اور روحوں کا تصور غلط ہے . یہ جن ہی ہوتے ہیں جو مردہ لوگوں کی شکل میں سامنے اتے ہیں۔
  • جنات انسانوں کی طرح ہی زندگی بسر کرتے ہیں وہ ایک عام  انسان کی طرح کھانا کھاتے ہیں پانی پیتے ہیں اور شادی بھی کرتے ہیں۔
  • جنات روشنی کی رفتار سے سفر کرتے ہیں. یہ ایک سیکنڈ میں2340 کلومیٹر میل  سفر طے کر سکتے ہیں ۔
  • جنات میں تقریباً 50سے60 انسانی مردوں کے برابر کی طاقت ہوتی ہے ۔
  • جنات جسمانی طور پر بہت مضبوط ہوتے ہیں لیکن وہ انسانوں کی طرح فکری طور پر مضبوط نہیں ہوتے اور نہ ہی وہ انسانوں کی طرح سوچتے ہیں۔
  • برےجنات میں  انسانی سوچ نہ ہونے کی وجہ سے وہ لوگوں کو برے کاموں کی طرف مائل کرتے ہیں ۔
  • جنات ہزاروں سال تک زندہ رہتے ہیں اور ان کی زندگی انسانوں سے کہیں زیادہ ہے۔
  • جنات کی  محتلف اقسام ہوتی ہیں. اور ہر قسم کی طاقت اور قابلیت ایک دوسرے سے الگ ہے۔
  • انسان کی طرح جنات بھی چل پھر سکتے ہیں۔
  • جنات انسان کی بچی ہوئی خوراک جیسے مچھلی اور مرغی وغیرہ کی ہڈیوں کو کھا لیتے ہیں ۔
  • جنات بھی مسلم اور غیر مسلم ہوتے ہیں. مسلم جنات انسانوں کو نقصان نہیں پہنچتے جبکہ انسانوں کو سب سے زیادہ تکلیف غیر مسلم جنات سے ہوتی ہے جو ہر وقت انسان کو پریشان کرتے ہیں ۔
  • غیر مسلم جنات انسانوں کو غلاظت ، گھناؤنے فعل اور مقامات کی طرف متوجہ کرتے ہیں ۔
  • جنات کو قابو میں رکھنے کا احتیار الله نے صرف حضرت سلیمان کو دیا تھا ۔
  • جادوگر  کالا جادو جنات کے ذریعے  کرتے ہیں جس میں وہ جنات کی مدد ان کی عبادت  کر کے حاصل کرتے ہیں۔
  • جادوگروں کو مذموم اور ذلیل آمیز کام کرکے کفر و شرک کرنا پڑتا ہے، تاکہ بدلے میں جنات ان کی مدد کرسکیں ۔
  • جب ایک جادوگر جادو  کرتا ہے تو وہ اپنی روح کو بیچ دیتا ہے، اس عمل کی وجہ سے جادو کرنے والا دائرہ اسلام سے خارج ہو جاتا ہے۔
مزید دیکھیں

ملتے جلتے مضامین

اوپر جائیں
Close
error: Alert: Content is protected !!